Rooh Ka Sakoon Episode 3

 Relax..
“کچھ بھی نہیں ہوگا “۔
“میں ہوں آپ کے پاس۔
,ملائکا نے ُاس بے نیاز شہزادے کو دیکھا جو کچھ دیر پہلے ُاس کو اپنا ہاتھ تھامنے سے منع کررہاتھا

۔اوراب خود ُاس سے پوچھے بنا ُاس کا ہاتھ تھامے بیٹھا تھا جیسے وہ ُاس کی ریاست کی کوئ ملکہ ہو جس کی حفاظت کے لیے ُاسے اپنے مضبوط قلعہ میں قید کیا ہو ,ملائکا کی سوچوں کا تانا بانا کب ختم۔ہوا کب جہاز لینڈ کیا ُاسے کچھ بھی ہوش نہ تھا, یہ نہیں ُاس نے کبھی حسین مرد نہیں دیکھے تھے مگر برابر بیٹھی اس چھا جانے والی صحرانگیز شخصیت کے آگے سب مات کھا گۓ تھے۔واللہ بنانے والے بہت سوچ کے ِاس شہزادے کو بنایا ہے جب ُاس نے اپنے بناۓ ہوۓ انسان کو اتنا خوبصورت بنایا ہے تو وہ خود کتنا خوبصورت ہوگا ۔یاللہ!! ملائکا نے لمبی سانس لی اور اپنے برابر میں بیٹھے ُاس شہزادے کو دیکھا جو کب کا پیسینجرز کے ساتھ آہستہ آہستہ چلتا جہاز سے باہر نکلنے کے پر تول رہا تھا پھر سب پیسینجرز کی طرح وہ بھی لائین میں لگ کے باہر ایڑپوڑٹ لاؤنج کی طرف آگئ جہاں ُانہیں ویٹنگ کے لیۓ بٹھایا گیاتھا۔باہر آکر ُاس نے ارد گرد میں نظر دوڑائ وہ ُاسے اپنے موبائل کے ساتھ مصروف نظرآیا۔
ملائکا ُاس سے تھوڑا دود ہوکرُاس کے سامنے والی چیرز پہ بیٹھ گئ۔ابھی کچھ دیر ہی گزری تھی کے چند سیاہ فام۔ملائکا کے برابر میں آکر۔بیٹھ گۓ جن کے دراز قدوقامت کے آگے ملائکہ بلکل چھوٹی بچی لگ رہی تھی ۔کچھ پل کے لیے ملائکہ انہیں دیکھ کے ہراساں ہوگئ  خاص کر کے ُاس سےجو ُاس کے برابر میں آکر بیٹھا تھا 

۔Hey blonde!!
ہاۓ سنہرے بالوں والی ۔
ملائکہ نے ُاسے دیکھ کر نظر انداز کردیااور خاموشی سے اپنے موبائیل پہ ُجھک گئ ۔کچھ لمحوں بعد وہ سیا فام ملائکہ کی جھولی سے بنا ُاس سےپوچھے ُاس کی ِچپس کا پیکیٹ ُاٹھا کے کھانے لگا, ملائکہ اندر ہی اندرُاس کے دھونس بھرے انداز پہ حیران رہ گئ, ُاس نے ُاس سے پوچھنے کے بجاۓ خاموشی اختیار کرلی کیوں کے ملائکہ کا ُشمار ان لڑکیوں میں ہوتا تھا جو پبلک پلیسس والی ایسے واقعت کو نظرانداز کردیتی تھی تاکہ کوئ تماشا نہ لگے ,اگر دوبارہ کچھ کرے گا تو شکایت لگادوگی ِاس ِبےہودہ کی۔ُاٹھ جاتی ہوںیہاں سے ۔



 دور بیٹھا اوزکان جو فون پہ کسی سے گفتگوں  کررہا تھا ُاس کی نظر ُاس سیاہ فام پہ پڑی جو ُاس وایلڈ کیٹ کی ِچپس ُاٹھا کے کھارہا تھا, اوزکان کے چہرے پہ ُمسکراہٹ چھا گئ۔
” اب تو یہ ضرور مار کھاۓ گا ِاس سے “۔
مگر اوزکان کو حیرت کا جھٹکا لگا جب وہ ُاس سیاہ فام۔کے پاس سے ُاٹھ کے ُاس کے برابر والی ُکرسی پے آکر  بیٹھ گئ۔یعنی وہ میرے پاس خود کو محفوظ سمجھ رہی تھی ۔

ملائکہ کے اندر اجاگر ہونے والی اک عجیب سی بے چینی جو گھر سے دور ہونے پہ محسوس ہوتی ہے وہ ایک دم۔سے ختم۔ہوگئ ُاسے ایسے لگا جیسے وہ اپنے ُمحافظ کےپاس آکر بیٹھ گئ ہو جو ُاسے ہر سردو گرم ہوا سے بچالے گا۔
کچھ دیر بعد ملائکہ کو چاۓ کی طلب ہوئ تو وہ چاۓ والے کاؤنٹر کی طرف بڑھ گئ۔ملاائکہ کے جاتے ہی اوزکان نے ُاس سیاہ فام کو ُاس کے پیچھے جاتےدیکھا اوزکان صالیح کے منہ پہ ِاک عجیب سی ُپراسرار تاثرات چھاگۓ جن کا ادراک ُاسے خود ابھی ہوا تھا ِاس سے پہلے سیاہ فام ملائکہ کے پیچھے کھڑا ہوتا, اوزکان صالیح نے دوقدم جلدی بڑھا کے ملائکہ اور ُاس سیاہ فام کے بیچ میں آگیااور ُایسی نظروں سے ُگھورا جیسے ُاسے معلوم ہو وہ یہاں کیا کرنے آیا تھا جوابً ُاس  سیاہ فام نے بھی ُاسے ُگھورا ِاس سے پہلے سیاہ فام اور اوزکان صالیح آپس میں ُالجھتے ُاسی کی طرح کا ایک اور سیاہ فام ُان دونوں کے بیچ آگیا اور خالص انگریزی میں اوزکان سے مخاطب ہواسر ہم معاذرت چاہتے ہے یہ تھوڑا ابنارمل ہے اگر ِاس کی وجہ سے آپ کو کوئ پریشانی ہوئ ہے تو معازرت چاہتے ہے ۔



About admin

Check Also

Thirst of Billionaire episode 2

 Shaukat finally confessed, feeling burdened by their mistreatment. “I’ve seen them,” he said. “But it’s …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *