MOMINA EPISODE 4

اماں میں کالج جارہی ہوں “۔مومنا نے اماں کو آواز لگائ “۔ رک مومی ناشتہ تو کرتی جا                                        ۔

“نہیں اماں بھوک نہیں ہے مجھے بس کا کرایہ دے دو دیر ہورہی ہے بس نکل جاۓ گی تو پریکٹیکل کا پیڑیڈبھی ِمس ہوجاۓ گا”۔مومی سفید یونیفارم میں معدہ سی رنگت لیے اپنی ماں سے ؔمخاطب ہوئ جو اب اپنے پرس سے پچاس روپے دے رہی تھی

۔یہ کیا اماں صرف پچاس روپے اتنے کا تو بس کا کرایہ ہی لگ جاۓ گا”۔مومنا نے اپنی ماں کو دیکھا جو ُاس کی بات ان ُسنی کرکے اندر چلی گئ مومنا کو سمجھ آگئ کے اماں کے پاس آج پیسے نہیں, وہ خاموشی سے کالج بیگ ُاٹھاۓ بس اسٹاپ کی جانب چل دی جہاں ُاسے ُاس کی منزل ملنے والی تھی 

 ۔

وہ بس کے انتظار میں کھڑی تھی کے اچانک ایک عورت تیزی سے سڑک کراس کرتی ہوئ  تیز رفتار گاڑی کے نیچے آنے لگی جسے کار سوار نے بچانے کی کوشش میں گاڑی داۓ جانب موڑ دی,گاڑی سڑک پہ لگے کھمبے سے ٹکراگئ عورت تو اس حادثے سے بچ گئ مگر گاڑی والےکا ٹھیک ٹھاک نقصان ہوگیا صبح کے وقت سڑک سنسان تھی مومنا۔بھاگ کے ُاس عورت کے نزدیک گئ جو سڑک پہ اپنی جانب گاڑی آتی دیکھ کر بیٹھ گئ تھی  ۔

آنٹی آپ ٹھیک ہے “۔مومنا نے انہیں ہاتھ سے کھینچ کے کھڑا کیا

“ہاں بیٹا اللہ نے ہاتھ دے کر بچالیا مجھے ورنہ آج میں گاڑی کے نیچے آجاتی “۔مومنا انہیں سہارا دے کربس اسٹاپ کے قریب لے گئ اچانک وہی لڑکا گاڑی سے نکل کر آنٹی کی جانب آگیا ۔

“سڑک آپ کے گھر کا باغ تھا جہاں آپ چہل قدمی کر رہی تھی اگر میں بروقت بریک نہیں لگاتا تو آپ اس وقت اللہ کے پاس ہوتی “۔ وہ اجنبی ُاس عورت پہ برھم ہوا ۔

بیٹا صبح کا وقت تھا میں اپنے دیھان میں تھی میں معزرت چاہتی ہوں میری وجہ سے آپ کی گاڑی کا نقصان ہوگیا “۔راہگیر عورت شرمندگی سے سر جھکاۓ بولی ۔

“آپ کی معافی سے کیا ہوتا ہے اتنا زیادہ نقصان کردیا ہے میرا صبح صبح کون پیسے بھرے گا اب ِاس کے “۔ 

 اجنبی نےمزید دل کی بھڑاس نکالتے ہوۓ مومنا پہ نظر ڈالی جو اپنی طبیعت سے مجبور اپنے اندر پنپتے لاوے کو دبانے کی کوشش کررہی تھی مگر کوشش ناکام رہی ۔

“کیوں وہ کیوں بھرے گی نقصان اگر وہ باغ میں چل رہی تھی تو آپ دیکھ کر سائیڈ بدل لیتے آۓ بڑے نقصان بتانے والے غریب تو ویسے بھی سڑک کے کیڑے مکوڑے ہوتے ہے نہ جنہیں آپ جیسے امیر مسل کے رکھ دیتے ہے “۔

“محترمہ میرےخیال سے آپ پرسنل ہورہی میں نے ایسا کچھ نہیں کہا سواۓ اس کے, کے میری گاڑی کا اتنا نقصان ہوگیا “۔اجنبی نےمومنا کی خوبصورت آنکھوں میں دیکھا جہاں ِاک الگ جہان آباد تھا ۔آنکھوں سے نظریں ہوتی ہوئ ُاس کی جیب پہ لگی مونوگرام پہ گئ جس پہ ُاس کے کالج    کا نام لکھا تھا  


About admin

Check Also

Thirst of Billionaire episode 2

 Shaukat finally confessed, feeling burdened by their mistreatment. “I’ve seen them,” he said. “But it’s …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *